اسلام آباد ۔ 10 جون (اے پی پی) وزیراعظم عمران خان سے وزیر داخلہ اعجاز احمد شاہ نے بدھ کو  ملاقات کی۔ وزیراعظم آفس کے میڈیا ونگ کی طرف سے جاری بیان کے مطابق وزیر داخلہ نے وزیراعظم کو وزارت داخلہ اور اس کے مختلف محکموں کی گذشتہ 20 ماہ (اگست 2018ءتا اپریل 2020ئ) کی کارکردگی رپورٹ پیش کی۔ وزیر داخلہ نے بتایا کہ اس دوران نیشنل ایکشن پلان کا احیاءکیا گیا۔ اس حوالہ سے ماہرین پر مشتمل 14 اعلیٰ سطحی کمیٹیاں تشکیل دی گئیں جو مختلف امور سے متعلق ایک ماہ میں اپنی سفارشات پیش کریں گی۔ وزیراعظم کو بتایا گیا کہ ملک میں سرمایہ کاری اور سیاحت کے فروغ کےلئے وزیر اعظم کے وژن کے مطابق 175 ممالک کےلئے الیکٹرانک ویزہ متعارف کرایا گیا جس سے پاکستانی ویزے کا حصول نہایت سہل ہو گیا ہے۔ ملک سے دہشت گری کا مکمل قلع قمع کرنے خصوصاً دہشت گردوں کے مالی وسائل کی روک تھام کے حوالہ سے جامع پالیسی مرتب کی گئی۔ سمگلنگ کے ناسور سے نمٹنے کےلئے اعلی سطحی سٹیئرنگ کمیٹی کی جانب سے جامع پالیسی اور مفصل حکمت عملی مرتب کرکے اس پر عملدرآمد کیا جا رہا ہے تاکہ ملکی معیشت اور صنعت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچانے والے اس عفریت کی موثر روک تھام کی جا سکے۔ اس عرصہ میں اسلام آباد میں قبضہ مافیا سے تقریباً 100 ارب روپے مالیت کی 15000 کنال اراضی واگزار کرانے کےلئے تجاوزات کے خلاف ریکارڈ 70 آپریشن کئے گئے۔ وزیراعظم کو بتایا گیا کہ نادرا کی جانب سے ملکی اور قومی مفاد میں دیگر سرکاری اداروں کو ہر ممکنہ معاونت فراہم کی جا رہی ہے، ان میں معیشت کو دستاویزی شکل دینے، ٹیکس بیس میں اضافہ اور ٹیکس وصولی کے معاملات شامل ہیں۔ اس کے علاوہ نادرا کی جانب سے نیا پاکستان ہاﺅسنگ پروگرام میں بھی معاونت فراہم کی جا رہی ہے۔ بیان کے مطابق معاون خصوصی برائے احتساب و داخلہ بیرسٹر شہزاد اکبر بھی ملاقات میں شریک تھے۔

وی این ایس