پشاور، 10جون(اے پی پی): وزیراعلی کے مشیر برائے اطلاعات و تعلقات عامہ اجمل وزیر نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل اکنامک کونسل کے اجلاس میں خیبر پختون خوا حکومت نے ضم شدہ اضلاع کے لئے این ایف سی ایوارڈ کا تین فیصد حصہ دلوانے کی بات بھرپور انداز میں اٹھائی ہے۔

گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان اور وزیر اعلی خیبرپختونخوا نے وزیر اعظم کو صوبوں کی جانب سے ضم شدہ اضلاع کے لئے تین فیصد حصہ کے حوالے سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ تمام صوبوں نے ضم شدہ اضلاع کو این ایف سی ایوارڈ میں تین فیصد حصہ دینے کا وعدہ کیا تھا جبکہ اب پنجاب کے علاوہ سندھ اور بلوچستان ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے۔

سول سیکرٹریٹ اطلاع سیل میں میڈیا کو بریفننگ دیتے ہوئے مشیر اطلاعات نے کہا کہ اجلاس میں وزیراعظم  عمران خان نے صوبہ سندھ اور بلوچستان کو اپنے وعدے کے مطابق ضم آضلاع کو این ایف سی ایوارڈ میں سے تین فیصد حصہ دینے کی ہدایت کی اور  ضم شدہ اضلاع کی تیز ترقی کے لئے وزیراعظم نے وفاق کی طرف سے بھی مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔

اجمل وزیر  نے مزید کہا کہ ضم شدہ اضلاع کی 72 سالہ محرومیوں کا ازالہ جلد از جلد کیا جائیگا۔ مشیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ وزیراعلی محمود خان کی قیادت میں ضم اضلاع میں ترقی کا تیز تر عمل جاری ہے اور ضم اضلاع کے عوام سے کئے گئے تمام وعدے پورے کیے جائینگے۔اجمل وزیر نے کہا ہے کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر صوبہ بھر میں ضلعی انتظامیہ متحرک ہے۔

 انہوں نے کہا کہ صوبہ بھر میں  ایس او پیز کی خلاف ورزی پر اب تک 1 لاکھ 66 ہزار  387  کاروائیاں کی گئی ہیں، جس میں ایس او پیز پر عمل نہ کرنے پر اکتالیس ہزار 5 سو 63  یونٹس /کاروباروں کو وارننگ جاری کئے گئے ہیں جبکہ 3219 یونٹس ایس او پیز کی خلاف ورزی پر سیل بھی کی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر اب تک 87 لاکھ 78 ہزار 980 روپے جرمانے وصول کئے گئے ہیں۔ مشیر اطلاعات نے مزید بتایا کہ صوبے کے ہسپتالوں میں کورونا کا استعداد کار مزید بڑھایا جارہا ہے جس کے لئے پہلے سے ہی اقدامات کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر کسی قسم کا سمھجوتہ نہیں کیا جائیگا۔

انہوں نے کاروباری حضرات کو ایس او پیز پر عمل درآمد یقینی بنانے کی تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام اور کاروباری حضرات کے تعاون سے ہی ہم اس وبا پر قابو پانے میں کامیاب ہونگے۔ اجمل وزیر نے کہا ہے کہ حکومت نےکورونا کا بھی مقابلہ کرنا ہے اور معیشت کا پہیہ بھی چلانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کے خلاف وزیراعلی محمود خان فرنٹ لائن سے لیڈ کررہے ہیں اور تمام انتظامات کا خود جائزہ لے رہے ہیں۔

مشیر اطلاعات نے کہا ہے کہ ہمارے ڈاکٹرز اور پیرامیڈکس سٹاف جو قربانیاں دے رہی ہے پوری قوم اسے ہمیشہ یاد رکھے گی۔موجودہ پیٹرولیم مصنوعات کی مصنوعی قلت پیدا ہونے کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پٹرول کا معاملہ بھی وفاقی حکومت کیساتھ اٹھایا گیا ہے جبکہ چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا پٹرول کی ترسیل کے حوالے سے سیکرٹری پیٹرولیم کے ساتھ مسلسل رابطے میں بھی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پٹرول کی مصنوعی قلت پیدا کرنے والوں کے خلاف تمام اضلاع  کی انتظامیہ بھرپور ایکشن میں ہے اور جو پیٹرول پمپس مصنوعی قلت پیدا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ان کو سیل بھی کیا جا رہا ہے کیونکہ حکومت کی ترجیح  عوام کو ریلیف دینا اور ان کی زندگیوں کو محفوظ بنانا ہے ۔

وی این ایس، پشاور