لاہور،16 جون  (اے پی پی): صوبائی وزير خزانہ پنجاب ہاشم جواں بخت  نے کہا  ہے کہ پنجاب حکومت نے پبلک ورکس پروگرام کو ترجيح دی ہے، پروگرام سے مختلف شعبوں ميں روزگار کے مواقعے پيدا ہوں گے۔ بجٹ میں عوام کو ریلیف دیا گیا ہے۔ موجودہ حالات میں بہترین بجٹ پیش کیا گیا ہے۔ جس کی مثال نہيں ملتی۔

منگل کو پوسٹ بجٹ نيوز کانفرنس ميں ہاشم جواں بخت نے کہا کہ مشکل حالات کے باوجود تعليم اور صحت پر توجہ دی، پنجاب کی معيشت کو بحال کرنا ہمارا عزم ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے سماجی شعبے ميں اچھا کام کيا ہے۔ دو سال ميں تعليمی شعبے کو 60 ارب روپے ديےگئے ہیں۔

وزير خزانہ پنجاب نے کہا کہ عالمی وبا کورونا کو ديکھتےہوئے شعبہ تعليم کے ليے پاليسی بنائيں گے، صحت اور تعليم کے بجٹ ميں اضافہ کيا گيا ہے۔ کووڈ 19 ريليف پيکج بھی بجٹ کا حصہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ کالجز، يونيورسٹياں، اسپتال بنانےميں وقت درکار ہے، ميں نے بجٹ تقرير ميں کسی نئے منصوبےکا اعلان نہيں کيا، آن لائن تعليم کے ليے ٹيبلٹ بھی لے کرائيں گے۔

ہاشم جواں بخت کا مزيد کہنا ہے کہ لوگوں کي معاشی بدحالی ختم کرنے کے ليے مزيد اقدامات کريں گے۔وزیر خزانہ نے کہا کہ حکومت کرونا سے جنگ لڑ رہی ہے۔ یہ وقت ہماری معیشت اور ہیلتھ سسٹم کے لئے بہت خطرناک ہے۔ پبلک ورکس پروگرام کو بجٹ میں اہمیت دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ 20 سال سے لاہور میں ایک بھی جنرل ہسپتال نہیں بنا۔ کرونا کے باعث ہم غیر یقینی صورتحال میں ہیں۔ کرونا جیسے حالات میں بھی ہمارے ملک میں فوڈ سکیورٹی کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ ہمیں پنجاب کی معیشت کو بحال کرنا ہے۔ ایک سال کے اندر دس ارب روپے سے رنگ روڈ بھی مکمل کریں گے.وزیر خزانہ نے کہا کہ رینٹ اے کار کا ٹیکس 16فیصد سے کم کرکے 5 فیصد کردیا ہے۔ اورنج لائن منصوبہ سفید ہاتھی بن چکا ہے۔ اورنج لائن منصوبہ کے لیے بجٹ میں 40 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔ ہم نے بجٹ میں عوامی رائے کو بھی شامل کیا ہے۔ کرونا کے لیے ایک ارب 60 کروڑ روپے بجٹ میں رکھے گئے ہیں۔  شجر کاری مہم اور نہر کی صفائی جیسے منصوبوں کو بھی دیکھنا ہے

 ہاشم جواں بخت نے کہا کہ  کرونا نے  پوری دنیا کی معیشت کو تباہ کیا ہے.انھوں نے کہا کہ دس ارب روپے مالیت سے آگے بڑھو پنجاب پروگرام شروع کیا جائے گا۔  روزگار کے مواقع فراہم کرنے ہیں۔  آئی ٹی سیکٹر کا ٹیکس کم کر کے 5 فیصد کر دیا گیا ہے۔ بجٹ میں تعلیم اور صحت کو بھی ترجیح دی گئی ہے.انھوں نے کہا کہ موجودہ سال تاریخ کا مشکل ترین سال ہے۔ حکومت نے صنعت کو فروغ دینا ہے۔  ہوٹلز اور بیوٹی پارلرز پر ٹیکس کم کر کے 5 فیصد کر دیا ہے.اورنج لائن ٹرین چلانے کے لئے 9 ارب روپے خرچ ہوں گے.پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کا قیام عمل میں لایا جا چکا ہے۔

وی این ایس،لاہور