لاہور، جون 9(اے پی پی): وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے منگل کے روز پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی کی وجہ سے صوبے میں کورونا کے مقدمات میں اضافہ ہوا ہے۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ حکومت معیاری آپریٹنگ طریقہ کار کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کر رہی ہے، احتیاطی تدابیر اختیار کرنا ہی کورونا وائرس سے بچاؤ کا واحد قابل عمل حل ہے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے افسوس کا اظہار کیا کہ صوبے میں کیسز کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم ایکٹریما انجیکشن پر کام کر رہے ہیں اور بتایا کہ لاہور میں کورونا وائرس کے کیسز انیس ہزار سے زیادہ ہیں۔

ALSO READ  Police officials instructing shopkeepers to close the Saddar Mobile Market after provincial government ordered to close all business activities at 6pm to curb the spread of COVID-19

 وزیرصحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ ملک بھر میں کورونا کیسز میں اضافہ ہو رہا ہے، پنجاب میں آج وائرس سے متاثرہ 1916 کیسز سامنے آئے ہیں۔ ہسپتالوں‌ میں‌ بیڈز اور وینٹی لیٹرز کی تعداد بڑھا دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے لاک ڈاون میں نرمی کی تو لوگوں نے سمجھا کورونا چلا گیا، عوام کی جانب سے ایس او پیز کی خلاف ورزی پر کورونا کیسز مزید بڑھے، حکومت نے فوری کارروائی کرتے ہوئے خلاف ورزی کرنے والے دکانداروں کو جرمانے کئے اور مارکیٹیں بند کیں۔ لاہور میں اب کورونا کیسز کی تعداد 19 ہزار 229 ہو گئی ہے۔

ALSO READ  President stresses upon commercial viability to promote country’s handcrafts

انہوں نے مزید کہا کہ پنجاب میں سب سے زیادہ کورونا ٹیسٹ ہو رہے ہیں، احتیاط ہی کورونا کے مسئلے کا واحد حل ہے۔ عوام کو کورونا کے خلاف حفاظتی اقدامات پر عمل کرنا ہو گا۔ کورونا کہیں نہیں گیا ہمارے ساتھ موجود ہے، حکومت نے صوبے کے ہسپتالوں میں بیڈز اور وینٹی لیٹرز کی تعداد میں اضافہ کر دیا ہے۔

وی این ایس، لاہور